You are here
Home > Politics

سارے جہاں سے اچھا ہندستاں ہمارا

ان دنوں ملک میں قومی ترانے کے تعلق سے بحث چھڑی ہوئی ہے ۔ اخبارات ہوں یا ٹی وی چینل یہاں تک کہ سوشل میڈیا پر بھی لوگ اسی تعلق سے پوسٹ کر رہے ہیں یا بحث کر رہے ہیں ۔ حکمراں جماعت بی جے پی اور اس کی ہمنوا ہندتوا تنظیمیںاکثر یہ درشانے کی

ڈیجیٹل انقلاب ؟

ان دنوں اقلیتی امور کے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے کہا کہ 'ڈیجیٹل انقلاب وزیر اعظم نریندر مودی کی کالا دھن اور بدعنوانی کے خلاف شروع کی گئی ایک مضبوط مہم ہے اور ملک میں ڈیجیٹل ادائیگی، آن لائن اور موبائل بینکنگ نظام کامیاب ہو رہا ہے۔ مختار عباس نقوی نے

سستی دواؤں کی تشخیص کا قانون ؟

دنیا کے ترقی یافتہ ممالک کی جانب دیکھا جائے ، تو ایک بات مشترکہ نظر آتی ہے کہ وہاں کی حکومت عوام کی صحت اور تعلیم پر پو ری توجہ دیتی ہے ۔ علاج معالجہ کا حکومت کی جانب سے بہترین انتظام ہوتا ہے اور تعلیمی ادارے بہت معیاری اور عوام کے

ملک میں قومی سطح پر متبادل پارٹی کی تلاش؟؟

ہندستان کی آزادی کے بعد سب سے زیادہ بر سر اقتدار رہنے کا موقع سکیولر چہرے والی پارٹی کانگریس کو  ملا ، اس کے بعد بی جے پی ، جنتا دل وغیرہ وغیرہ ۔ اگر گزشتہ ۶۷؍ برسوں کا جائزہ لیا جائے ، تو یہ بات اظہر من الشمس ہے کہ

بھینس ، بکرے کے بعد اب مرغ کی بھی باری ہے؟؟

ہندستان کی سب سے بڑی ریاست اتر پردیش میں جب سے ذبیحہ پر پابندی لگ گئی ہے ، پورے ملک میں یہ معاملہ موضوع بحث بناہوا ہے ۔ خبروں کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت کے قیام کے بعد ریاست میں بھینس، مرغ اور بکرے کے گوشت کا کاروبار تقریباً پوری طرح

اینٹی رومیو اسکواڈ ، گیہوں کے ساتھ گھن بھی ؟

خبروں کے مطابق ریاست اترپردیش کے نئے وزیراعلی آدتیہ ناتھ نے ضلع کے ہر تھانے میں اینٹی رومیو اسکواڈ بنانے کا حکم دے دیا ہے۔ خواتین کے ساتھ ہونے والی چھیڑ چھاڑ روکنے کے لیے بنائے گئے بی جے پی کے اینٹی رومیو اسکواڈ کے بارے میں یہ بھی کہا جا رہا

بی جے پی حکومت میں ذبح خانوں پر پابندی ، ہزاروں لوگ بے روزگار

ریاستی حکومت نے تمام غیر قانونی مذبح خانوں کو بند کرانے کا حکم جاری کر دیا خبروں کے مطابق ریاست اتر پردیش میں یوگی آدتیہ ناتھ کی حکومت نے اقتدار سنبھالتے ہی ریاست میں غیر قانونی مذبح خانوں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا تھا۔ ریاست اترا کھنڈ کے معروف شہر ہری

بی جے پی اقتدار کے بعد

بی جے کے اقتدار میں آتے ہی ، جو تبدیلیاں سامنے آئی ہیں ، اس سے یہ نہیں محسوس ہوتا ہے کہ ملک کی ترقی کے لیے کوئی کام کیا جا رہا ہے یا کوئی ایجنڈا ہے ۔ غور کیا جائے ، تو اترپردیش اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی بھاری

بابری مسجد کا تنازع عدالت سے باہرکس طرح حل کیا جائے؟

۶؍ دسمبر ۱۹۹۲میں سخت گیر کار سیوکوں نے منہدم کر دیا تھا۔مگر اس کی نوبت کیسے آئی ، اس پر ایک نگاہ ڈالی جائے ۔ سیکولر پارٹی کانگریس کے دور حکومت یعنی جس وقت پنڈت نہرو جی وزیر اعظم تھے ، بابری مسجد میں مورتیاں رکھی گئیں ، انہیں اگر اسی وقت ہٹا دیا جاتا

گائے ذبیحہ پر دس سال قید او رایک لاکھ روپئے جرمانہ! گجرات فساد پر ؟؟

ان دنوں خبر کچھ اس طرح ہے کہ گائے ذبیحہ پر دس سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانہ ؟ حکومت گجرات گاؤ ذبیحہ میں ملوث رہنے والوں کو انتہائی سخت سزاکے لیے ایک بل اسمبلی میں متعارف کرنے جارہی ہے۔موجودہ قانون میں ۲۰۱۱؍ میں ترمیم لائی گئی تھی او رزیادہ

Top